اردو کی جانباز سپاہی وبلند حوصلہ، بردبار وجفاکش میرمعلمہ محترمہ عائشہ تسکین کی وداعی تقریب سیڑم، رحمت نگر کے سرکاری اردو وسطانیہ اسکول میں شاندار تقریب کاانعقاد

0
Post Ad

گلبرگہ۔ 7/جون (راست) جناب خواجہ فریدالدین انعامدار مؤظف محکمہ پولیس اپنے سماجی کام سے مختلف اسکول جاتے اور طلبہ میں اردو، انگریزی اور کنڑا گرائمر کی کتابیں مفت تقسیم کرتے ہیں۔ ان کایہ سلسلہ گلبرگہ ضلع کے سیڑم ہی تک نہیں کلیان کرناٹک علاقے میں دوردراز تک پھیلاہواہے۔ صرف اتنا ہی نہیں کہ وہ اسکول جاکر خود سے حاضری دے آتے ہیں بلکہ انہیں اسکولوں میں ہونے والے مختلف پروگراموں میں مدعو بھی کیاجاتاہے۔جس وقت اردو کی جانباز سپاہی وبلند حوصلہ، بردبار وجفاکش میرمعلمہ محترمہ عائشہ تسکین کی وداعی تقریب منعقد ہوئی انھیں بھی مع اہلیہ دعوت نامہ دیاگیا۔وہ گلبرگہ سے سیڑم مع اہلیہ تقریب میں حاضری کے لئے عازم سفر ہوئے اور وقت مقررہ سے پہلے وہاں پہنچ گئے۔چونکہ پروگرام بڑے پیمانے پر ہورہاتھا اس لئے کئی ایک مہمان حاضر تھے جن میں وجے کمارجمکھنڈی بی ای او، سالار مسعود بھائی سیڑم، محمد شفیع الدین سیڑم CRP، عائشہ صدیقہ خانم مدھول CRP، محمد عثمان صاحب SDMCسیڑم، تعلقہ سیڑم کے اساتذہ وصدر مدرسین شامل رہے۔ دیگر مہمانوں میں فاروق حسین وظیفہ یاب میرمعلم، معزالدین سابق صدر سیڑم، احمد باشاہ میرمعلم گلبرگہ (شمال)، الطاف حسین میر معلم (شمال) گلبرگہ، نظام الدین معلم گلبرگہ (جنوب) نام لیاجاسکتاہے۔ سبھی نے اپنے اپنے حساب سے عائشہ تسکین صاحبہ کی شالپوشی اور گلپوشی کرتے ہوئے انہیں وداع کرنے کاسامان کیا۔ جناب خواجہ فریدالدین انعامدار اور اہلیہ نے عائشہ تسکین اور ان کے خاوند کو رومال اور اسکارف اڑھاکر گلپوشی کافریضہ انجام دیتے ہوئے شیرینی تقسیم کی۔جناب خواجہ فریدالدین انعامدار نے اس موقع پرصحافیوں کو بتایاکہ عائشہ تسکین میرمعلمہ کامعمول تھاکہ وہ روزنامہ ”انقلاب ِ دکن“ گلبرگہ پڑھ کر دینی کالم، سائنس وٹیکنالوجی صفحہ، جنرل نالج اور حدیث شریف کو اخبار سے تراش کر علیحدہ علیحدہ رجسٹرڈ میں چسپاں کرلیاکرتی تھیں۔ ان کاتقریر 20-01-1996کو اڑکی LPSمیں ہوا۔ پیشہ تدریس ورثہ میں ملاتھا۔ وہ کسی ماہر نفسیات کی طرح کشادہ ذہن کی مالک تھیں۔ وہ ایس ڈی ایم سی اور تدریسی اسٹاف کے ساتھ مل جل کر طلبہ وطالبات کی ہمت افزائی کرتے ہوئے علم کاسمندر بہادیاکرتی تھیں۔ پرائمری سطح سے ہی طلبہ وطالبات کو حمد، نعت شریف اور اردو کنڑا، انگریز ی میں تقاریر بھی سکھاتیں۔اسٹوڈنٹس کاٹیلنٹس دیکھ کر میں جب تعریف کرتاتو یہ کہتیں کہ یہ میرے اساتذہ کی بدولت ہے۔ آپ میرے اساتذہ کی تعریف کریں۔ عائشہ تسکین کو سال 2012؁ء کا ضلع سطح کا بسٹ ٹیچر ایوارڈ مسلم گورنمنٹ اسوسی ایشن کی جانب سے دیاگیا۔ اسی طرح 2020؁ء کو اسٹارٹیچرایوارڈ (Star Teacher Award) ہلپنگ ہینڈ تنظیم بنگلورو کی جانب سے دیاگیا۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ عائشہ تسکین علم کے میدان میں آئندہ بھی لگی رہیں اور اللہ ان سے علم کی خوشبو کو پھیلانے کاکام لے۔ آمین۔واضح رہے کہ اس موقع پر میرؔبیدری کی جانب سے ایک تہنیتی نظم روانہ کی گئی تھی جس کو فیاض احمدمعلم نے پڑھ کر سنایا۔اور داد حاصل کی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

error: Content is protected !!