سرپرست اور والدین بچوں کے ساتھ وقت گزاریں, اخلاق و کردار پر توجہ دیں اور اعلیٰ تعلیم یافتہ ہوں بسوا کلیان میں کیرئیر گائیڈنس و پیرینٹننگ پروگرام سے ماہرینکے خطابات

0
Post Ad

بسواکلیان (نامہ نگار) بسواکلیان میں جماعت اسلامی ہند کے شعبہ تعلیمات کے زیر اہتمام ایک روزہ کیرئیر گائیڈنس و پیرنٹنگ کا نفرنس بسوا کلیان کے سبھا بھون میں منعقد ہوئی اس کے پہلے سیشن کا آغاز قاری اظہار الحق کی قرات کلام پاک سے ہوا۔ افتتاحی کلمات کہتے ہوئے امیر مقامی جماعت اسلامی ہند بسواکلیان حافظ اسلم جناب نے بسواکلیان کی تعلیمی ، سماجی اور معاشرتی صورتحال کا خاکہ کھینچتے ہوئے کہا کہ ہم تعلیم سب کے لئے گرائجویشن سب کے لئے ، مہم کے تحت بسواکلیان لاری آٹو نگر کو آئی نگر میں تبدیل کرنے کی جدوجہد کریں گے۔- اس کے علاوہ ماہر تعلیم و تربیت جناب محمد نجم الدین شمس الدین ، گائیڈینس و کونسلنگ ایکسپرٹ ایکس فیکلٹی ملیہ کالج بیڑ مہاراشٹر نے ایس ایس ایل سی اور پی یوسی کے بعد کے کورسیس پر تفصیلی روشنی ڈالی اور مہارت ، کردار سازی اور متوجہ ہونے کی اہمیت کو واضح کیا۔ بعد ازاں مستجاب خاطر اسسٹنٹ پروفیسر فار اکنامکس مانو حیدرآباد نے سوشیل سائنس اور اکنامکس سسٹم پراظہار خیال کیا۔اس کے بعد جناب سید تنویر احمد سیکریٹری جماعت اس اسلامی ہند و مرکزی تعلیمی بورڈ نے بچوں کے تئیں والدین کی ذمہ داری کو بہت دلچسپ انداز میں واضح کیا اور سامعین سے اقرار کروالیا کہ والدین ہی بچے کی تعلیم و تربیت کے اصل ذمہ دار ہوتے ہیں۔ پہلے سیشن کی کاروائی محترم الطاف امجد نے چلائی۔ کانفرنس کے دوسرے سیشن دوپہر سے شروع ہوا جس میں یو پی ایس سی رینک ہولڈر راتھوڑ لکھن سنگھ دلدار سنگھ نے خطاب کرتے ہوئے (یوپی یس سی) ایکزام کی تیاری اور اپنے تجربات و مشاہدات کو پیش کیا۔ اس کے بعد بسواکلیان کے مسلم اسکول مینجمنٹ حضرات کو جماعت اسلامی ہند بسوا کلیان کی جانب سے ان کی تعلیمی خدمات کے عوض تہنیت پیش کی گئی۔ بعد ازاں محمد ساجد حسین فاٶنڈر اسکولیزم جھارکھنڈ نے تحقیق و تخلیق کے موضوع پر تکنیکی انداز میں اظہار خیال کیا۔ اس کے بعد ڈاکٹر عبدالقدیر چیرمین شاہین ادارہ جات بیدر نے تیرے سامنے آسماں اور بھی ہیں کہ عنوان سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ میں شاہین کی صفات آجائیں اور اونچے مقاصد کے ساتھ اپنے عزائم کو بلند کریں۔ انہوں نے لڑکیوں اور لڑکوں پر توازن کے ساتھ توجہ دینے پر زور دیا۔ اس کے بعد پروفیسر فیضان مصطفی وائس چانسلر چانکیہ نیشنل لاء یونیورسٹی پٹنہ بہار نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملک کے دستور سے متعلق ہر شہری کو معلومات ہونا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج مسلم سماج میں قابل لائیر یعنی وکیل کا ہونا بہت ضروری ہے تبھی ہم یہاں درست انصاف کی امید کرسکتے ہیں۔ آخر میں جناب سید تنویر احمد مرکزی سیکریٹری جماعت اسلامی ہند و مرکزی تعلیمی بورڈ نئی دہلی نے اختتامی خطاب کرتے ہوئے اس ایک روزہ کانفرنس منعقد کرنے کو قابل ستائش کہا اور اس کانفرنس کے انعقاد پر ذمہ داران کو مبارکباد پیش کیا۔ بسوا کلیان کے سبھا بھون میں شہر کے علاوہ اطراف و اکناف سےطلباء و طالبات, والدین و سرپرست اور معزز خواتین و حضرات کی کثیر تعداد شریک تھے کانفرنس کےدوسرے سیشن کی کاروئی برادر اسد اللہ خان نے چلائی۔ برادر محمد احمد سر کے اظہار تشکر کے ساتھ یہ ایک روزہ کانفرنس اختتام پزیر ہوا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

error: Content is protected !!