ادارہ ادب اسلامی کا شورائی نظام

0
Post Ad

لوگ آج بھی کرسی کے لئے ایڈی چوٹی کا زور لگاتے ہیں یہاں تک کہ پرسنل اٹایک کرنے میں بھی انہیں باک نہیں ہوتا۔
موجوده پرفتن دور میں جمہوری طریقے پر عامل اداره ادب اسلامی هند کرناٹک ، جو جماعت اسلامی هند کے زیر نگرانی کام کرتا ہے ۔ اپنے میقات کے اختتام پر آزادانہ پرامن اور جمہوری طرز کی بنیاد پر انتخابات کراتا ہے۔ یہاں نہ خاندان دیکھا جاتا ہے نہ حسب نسب نہ رنگ و روپ بلکہ یہاں لوگوں کی اکثریتی رائے کے تحت منتخب کیا جاتا ہے۔ خود جماعت اسلامی کے انتخابات بھی اسی طرز پر ہوتے ہیں ۔ اس سے تمام کے دلوں کو طمانیت حاصل ہوتی ہے ، ہر ایک کی دلچسپی شامل حال ہوتی ہے جس سے کام کے فروغ پانے اور بڑھوتری اور مدد ملتی ہے۔
2021 تا 2025 کے انتخابات مرکزی صدر جناب ڈاکٹر شاه رشاد عثمانی کے زیرصدارت، اور محترم ڈاکٹر بلگامی محمدسعد، امیر حلقہ جماعت اسلامی کرناٹک ، کی نگرانی دفتر حلقه میں ہوئے۔ متفقہ طور پر پروفیسر محمد سلیم دولت کوئھی بیجا پور کا ریاست کرنائک کے صدر کی حیثیت سے انتخاب ہوا ہے اللہ تعالی انہیں استقامت عطافرمائے ریاست کرنائک میں علمی حلقوں میں باذوق افراد میں خوب کام کی توفیق عطا فرماے ۔
پروفیسر سلیم دولت کوئی صاحب ایک خوش مزاج و خوش طبع شخصیت کے مالک ہیں اردو تاريخ و ادب پر بہت گہری نظر رکھتے ہیں ۔ سنجیده ، باذوق معاملہ فہم اور فیاض آدمی ہیں ۔ ان کے نام میں بھی دولت کی کوٹھی موجود ھے ، لیکن وہ اپنے اندر علمی خزانے کی بڑی کوٹھری رکھتے ہیں ۔ حیدر آباد میں ادب کا بدلتا ہوا منظر نامہ عنوان پر 2019 میں ایک سیمنار ہوا تھا موصوف نے دل کو چھونے والا مقاله پڑھا تھا۔ موصوف اپنے اندر ایک کشش رکھتے ہیں ۔ اور سامنے والے کا دل جیت لیتے ہیں ۔ ہماری دعا کہ وہ اپنی خداداد صلاحیت لگاکر باصلاحیت افراد کو عشق حقیقی سے جوڑدیں ۔ اس طرح جو ڑ یں کہ موجوده زندگی بھی پر امن گزرے اور عقبیٰ بھی ۔ اس کے ساتھ سابق صدر م پ راہی کی خدمات کو الله تعالٰی قبول فرمائے


ادارہ ادب اسلامی کے سکریڑی حلقہ کے طور پر جناب محمد عبدالقدیر صاحب کا انتخاب عمل میں آیا ہے دوسری مرتبہ بھی الله تعالی انہیں موقع فراہم کیا ہے ۔ ہم انہیں بھی دلی مبارک باد دیتے ہیں ۔ تنظیمی صلاحیت کے آدمی ہیں بہت فعال ہیں ، بر b وقت فیصلے لینے میں ماہر ہیں۔پچھلی میقات میں بھی آپ نے بہت سے ورک شاپ کیے۔ ان کی اصل خوبی یہ ہے کہ وہ افراد کو کام پر لگاتے ہیں اور خود بھی عمل کرتے ہیں ۔ تنظیمی صلاحیت کا میں نے اوپر ذکر کیا ھے ، یه صلاحیت موروثی ہے۔ ان کے وا لد محترم مرحوم جناب جعفر حسین صاحب میں یہ صلاحیت پائی جاتی تھی ۔ عبدالقدیر صاحب کے اندر بھی اس کا پایا جانا کچھ تعجب کی بات نہیں۔
جوائنٹ سیکرٹری کے طور پر جناب سید ابرار حسینی را چور جو بہت صالحہ نوجوان ہیں ، خازن جناب طاہر رحمانی ہری ہر جو اپنی آواز کا جادو جگاتے ہیں ، ایک بہترین خطیب کی حیثیت سے جانے جاتے ہیں ۔

پھر دو نائب صدور میں بنگلورو کی مشہور شخصیت جناب ریاض احمد خمار ہیں اور دوسرے یوسف رحم میر بیدری بیدر ، جو ادبی دنیا میں محتاج تعارف نہیں ، جو بیک وقت بہترین نقاد ، بہترین مقرر ، بہترین کنوینر ، بہترین افسانہ نویس، بہترین افسانچہ نویس، سبق آموز کہانیاں لکھنے کے ماہر ، غرض کہ میں ان کی صلاحیتوں کا حق ادا نہیں کرسکتا ۔ دعا هیکه الله تعالی ان کی جملہ خوبیوں کو اداره ادب اسلامی میں منتقل کرے ۔
یہ جو ٹیم ہے بہت فعال ہے۔ اللہ نے ایک موقع دیا ہے ، ان کے لئے ایک امتحان ہے ۔ اللہ کامیابی عطافرمائے
آمین ثم آمین

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

error: Content is protected !!