کالجوں میں 8,500 اسمارٹ کلاس روم تعمیر کئے جائیں گے: اشوتھ نارائن

0

بنگلورو،11؍جولائی (ایس او نیوز) ریاست میں کووِڈ کا اثر طلباء کی صحت پر پڑنے کے خدشے سے انہیں اب تک کلاسوں سے دور ہی رکھا گیا ہے۔ان کے لئے زیادہ توجہ ڈیجیٹل نظام پر دی جارہی ہے۔ کووِڈ وباء کے اس ماحول میں طلباء کے لئے ڈیجیٹل سہولت فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔ نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر سی این اشوتھ نارائن نے یہ بات کہی۔

آج بروز ہفتہ شہر کے ملیشورم میں واقع سرکاری فرسٹ گریڈ کالج کے طلبا میں مفت ٹیبلیٹ کی تقسیم اور اس کالج میں کمپیوٹر لیاب کا افتتاح کرنے کے بعد انہوں نے کہا کہ رواں تعلیمی سال ہی کے دوران چند دنوں میں ریاست میں محکمہ اعلیٰ تعلیم کے زیراہتمام مختلف سرکاری اور امدادی کالجوں میں 8,500 اسمارٹ کلاس رومس تعمیر کئے جائیں گے۔ان میں سے 2,500 کمروں میں اسمارٹ کلاس رومس تیار کرنے کا کام شروع ہوچکا ہے۔جن کالجوں میں اسمارٹ کلاس رومس تعمیر کئے جائیں گے ان کالجوں میں تمام جماعتوں کے طلباء ان اسمارٹ کلاس رومس کا استعمال کرسکتے ہیں۔

ڈاکٹر اشوتھ نارائن جو وزیراعلیٰ تعلیم بھی ہیں، نے بتایا کہ پچھلے تعلیمی سال کے دوران ریاست کے مختلف کالجوں کے ایک لاکھ 10ہزار طلباء کو لیاپ ٹاپ حکومت نے فراہم کئے تھے جس پر 330کروڑ روپئے خرچ کئے گئے تھے۔ اسی طرز پررواں تعلیمی سال کے دوران بھی انجینئرنگ اور پالی ٹیکنک کے ایک لاکھ 60ہزار طلباء کو مفت ٹیبلیٹ فراہم کئے جارہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ حکومت کالجوں کے طلباء کو ڈیجیٹل ماحول میں ڈھالنے کی پابند ہے۔ملک میں کرناٹک پہلی ریاست ہے جہاں کالجوں میں ڈیجیٹل نظام متعارف کروانے ریاستی حکومت مختلف اقدامات کررہی ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

error: Content is protected !!