ادارہ ء ادبِ اسلامی ہند کے سابق قومی صدر اورسابق ایڈیٹر ماہنامہ ”پیش رفت“ ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی نے عوام تک رسائی کیلئے روزنامہ ”حیدرآباد کرناٹک“ کی تعریف کی

0
Post Ad

بیدر۔ 23/مارچ (محمدیوسف رحیم بیدری) بیدر ضلع مستقر سے گذشتہ 63سال سے نکلنے والے اردو روزنامہ ”حیدرآبادکرناٹک“ کی عوام تک رسائی کے لئیادارہ ء ادبِ اسلامی ہند کے سابق قومی صدر اورسابق ایڈیٹر ماہنامہ ”پیش رفت“ ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی نے جم کرتعریف کی۔ اور کہاکہ اخبار اسی کو کہتے ہیں جو عوام تک پہنچے ورنہ 50کاپیوں کی اشاعت کے ساتھ فائلوں کی زینت بننے والے اخبارات بھی موجودہیں۔ ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی صاحب بھٹکل کی ایک کالج کے ایچ اوڈی رہے ہیں۔وظیفہ یاب ہونے کے علاوہ موصوف کی 12کتابیں منظر عام پر آئی ہیں۔ ان کی بیدر آمد کے موقع پر اسلامی لائبریری، رٹکل پورہ بید رمیں شاعر، ادیب اور صحافی جناب محمدیوسف رحیم بیدر ی نے بیدر میں اردو اسکول، اوراردو صحافت کی صورتحال سے واقف کراتے ہوئے خصوصاً روزنامہ ”حیدرآباد کرناٹک“ کی سرکیولیشن کے بارے میں بتایاکہ چارصفحات کابلیک اینڈ وائٹ اخبار روزنامہ ”حیدرآبادکرناٹک“ صبح 11بجے کے بعد کہیں نہیں ملتا، گذشتہ 63سال سے زائد عرصہ سے پابندی وقت کے ساتھ شائع ہوتاہے۔جناب ایم اے حمید صاحب مرحوم نے اس اخبار کو علاقہ حیدرآباد کرناٹک کا ایک مقبول عام اخبار بنانے میں خون جگر سے کام لیاتھا۔ اب ان کے فرزندان اس اخبار کے ذریعہ اردوصحافت کی بقا اور اردو عوام کے مسائل حکومت تک پہنچانے کافریضہ انجام دے رہے ہیں۔ پبلک ڈیمانڈ اس قدر ہے کہ دیگراردو اخبارات 11بجے کے بعد ملتے ہیں لیکن حیدرآباد کرناٹک نہیں ملتا۔ ڈاکٹر شاہ رشاد عثمانی نے اس موقع پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مجھے خوشی ہورہی ہے کہ علاقہ کلیان کرناٹک میں اردو صحافت پھل پھول رہی ہے۔ البتہ اردو صحافت کا ساتھ دینا وقت کی اولین ضرورت ہے۔ اور یہ کسی بھی زبان کے لئے بڑی بات ہوتی ہے کہ اس کی صحافت 200سال مکمل کرے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

error: Content is protected !!